معہد عثمان بن عفان (گرلز)

ایک صالح معاشرے کی تشکیل میں خواتین کے کردار کی اہمیت اہل نظر سے مخفی نہیں ،ایک بچہ جب آنکھ کھولتاہے توماں کی گود ہی اس کی اولین تربیت گاہ  ہوتی ہے ،بچپن میں ماں کی بہترین تعلیم وتربیت ہی بڑے ہونے کے بعد اس کے باکردار وباعمل مسلمان اورمفید شہری بننے کی ضامن ہوتی ہے۔ اس لحاظ سے لڑکیوں کی اچھی تعلیم وتربیت کی لڑکوں کی بنسبت کہیں زیادہ ضرورت ہے کہ یہی لڑکیاں آگے جاکر مستقبل کے معماروں کی تربیت کافریضہ انجام دے کر بہترین اسلامی بنیادوں پرمشتمل معاشرے کے قیام کی راہ ہموارکریں گی۔

اس تناظر میں اربابِ معہد نے جہاں بچوں کے لئے حفظ وناظرہ پھر اس کے بعد پرائمری وسیکنڈری کے شعبہ جات کاانتظام کیا،اسی طرح معہد کی تاسیس کے دوسال بعدہی ایک مستقل مکان میں بچیوں کے لئے شعبۂ حفظ وناظرہ کاآغازکیا اس کے کچھ عرصے بعد بچیوں کے لئے پرائمری کی کلاسوں کاانعقادعمل میں آیا، دوسال پہلے لڑکیوں کے لئے بنیادی دینی تعلیم اورعربی زبان پر مبنی مختصر تین سالہ اور (اب دوسالہ ) وفاق المدارس کے مقررکردہ کورس کی تعلیم کاانتظام کیاگیا۔ بنات کے شعبہ جات کامختصر تعارف ذیل میں پیش خدمت ہے ۔

شعبۂ حفظ وناظرہ :

معہد کے شعبۂ بنات میں فی الحال قاعدہ وناظرہ اور حفظ کی درسگاہوں میں متعدد معلمات مصروفِ عمل ہیں، اور سینکڑوں طالبات قرآن کریم حفظ کی تعلیم حاصل کررہے ہیں۔  بنات کے شعبۂ حفظ کے نتائج الحمدللہ بہت حوصلہ افزا ہیں۔

شعبہ ابتدائیہ و ثانویہ (پرائمری و سیکنڈری)

معہد کے شعبہ بنات میں بچیوں کے لیے جہاں دینی، معاشرت اور گھریلو امور کے مضامین کی تعلیم دی جاتی ہے وہاں معمولی مگر اہم تبدیلیوں کے ساتھ پرائمری و سیکنڈری کی تعلیم بھی دی جاتی ہے۔

معہد میں پرائمری کی کلاس میں نرسری، کچی پہلی اور پہلی جماعت سے لے کر پانچویں جماعت تک تعلیم پر مشتمل ہیں۔

اور سیکنڈری کی کلاس بھی دینی مضامین کے اضافوں کے ساتھ دسویں تک کی تعلیم پر مشتمل ہیں۔

ان کلاسوں میں بنیادی طور پر سرکاری نصاب پڑھا جاتا ہے البتہ انگلش کے مضمون کے لیے آکسفرڈ یونیورسٹی پریس کی وضع کردہ کتابیں مقرر کی گئی ہیں۔

اس طرح یہ بچیاں میٹرک (سائنس) کرکے بورڈ کے سرکاری امتحان میں شرکت کرتی ہیں اور کامیابیاں حاصل کرتی ہیں۔

شعبۂ دراسات دینیہ:

وفاق المدارس نے طالبات کے لئے پہلے چار سا لہ نصاب اور پھر چھ سالہ نصاب جسے عر ف میں ‘‘ عالمہ کورس’’ کہاجاتاہے ، متعارف کروایا ہے ، ملک کے طول و عرض میں مد ا ر س کے وسیع جا ل میں پھیلے ہو ئے مدا ر س البنا ت میں تقریباًوہی کتب منتخب کرکے پڑھائی جاتی ہیں جو طلبہ کودرس نظامی میں پڑھائی جاتی ہیں ۔ یہ کورس طالبات کے لئے کسی قدر طویل تھا بعض خواتین اپنی مختلف ذمہ داریوں کے باعث اس میں شریک ہونے سے محروم ہوجاتی تھیں، اسی لئے ‘‘وفاق ’’  ہی نے ایک تین سالہ دراسات دینیہ کا مختصر کورس متعارف کرایااس کے بعد دو سالہ نصاب مقرر کیا، جس میں جامعیت کے ساتھ ساتھ اور زیادہ اختصار وسہولت کوپیش نظر رکھاگیاہے۔اربابِ معہد نے بھی فی الحال اپنے ادارے میں اسی مختصر کورس کاانتظام کیاہوا ہے الحمدللہ یہ کورس کامیابی کے ساتھ جاری ہے اور اب تک کئی بیچ اس کورس کو مکمل کرکے فارغ ہوچکے ہیں۔

ایک ضروری وضاحت :

معہد کے شعبۂ بنات میں روزاوّل سے اس بات کاالتزام کیاگیاہے کہ خواتین کوجوتعلیم جس حدتک دی جائے ،شرعی حدود کے اندر رہ کردی جائے ،احتیاط کے کسی پہلو کونظرانداز نہ کیاجائے،چنانچہ طالبات کے واسطے مخصوص یونیفارم، پھر بڑی طالبات نیز معلمات کے واسطے مخصوص برقعہ کاالتزام ضروری ہے ،اسی طرح اس بات کااہتمام کیاگیاہے کہ طالبات کوپڑھانے کے واسطے صرف معلمات ہی کا تقرر ہو،کسی مرد معلم سے خواتین کوپڑھانے کی خدمت نہ لی جائے۔ چنانچہ انتظامات کے لئے ،نیز تدریس کے لئے صرف خواتین معلمات ہی اس شعبہ میں کام کرتی ہیں۔