دار الإفتاء معهد

ایک فتویٰ چونکہ ایک لمبے پروسس سے گزرنے کے بعد فائنل ہوتا ہے، جنہیں ابتداءً علماء کرام حل کرتے ہیں، اور ان کے اساتذہ ری چیک کرتے ہیں۔ اس دوران ضرورت پڑنے پر اصلاح ومراجعت کام عمل جاری رہتا ہے، تاآنکہ تجربہ کار اور کہنہ مشق مفتیانِ کرام اساتذہ اکرام کی دوسری ٹیم کی طرف فارورڈ کردیا جاتا ہے۔ یہاں بھی خوب چھان پھٹک کی جاتی ہے، اگر ضروری ہو تو ترمیم کرکے فتویٰ فارورڈ کردیا جاتا ہے۔ اور آخر میں محترم شیخ الحدیث حضرت مولانا نور البشر صاحب دامت برکاتہم اس فتویٰ کو بنفسِ نفیس خود دیکھتے ہیں، اصلاح کی ضرورت ہو تو اصلاح کرتے ہیں، ورنہ فتویٰ فائنل کردیا جاتا ہے، جو یہاں پر پیسٹ ہوتا ہے ، یہ محض اللہ کے فضل اور اس کی مدد کے ذریعے ہی ممکن ہے۔​​

پہلی ٹیم میں شامل مفتیانِ کرام:۔

مولانا عمران حسن صاحب، (فارغ التحصیل ومتخصص جامعہ فاروقیہ کراچی، واستاذ معہد عثمان بن عفانؓ)۔

مولانا مفتی احتشام الحق صاحب دامت برکاتہم (فارغ التحصیل جامعہ بنوری ٹاؤن و استاذِ حدیث معہد عثمان بن عفانؓ)۔ حضرت مفتی صاحب ایک طویل عرصہ سے حدیث وفقہ کی خدمات کراچی کے مختلف موقّر اداروں میں انجام دے رہے ہیں، دار العلوم یسین القرآن نارتھ کراچی، امداد العلوم( پاپوش)، معہد العلوم وغیرہ دینی اداروں سے فارغ التحصیل آپ کے شاگردوں کی تعداد ہزاروں میں ہے۔

مولانا مفتی محمد سلیم صاحب(فاضل ومتخصص واستاذ جامعہ دار العلوم کراچی)۔​​

دوسری ٹیم میں شامل اساتذہ علماء ومفتیان کرام:۔
استاذِ محترم حضرت مولانا مفتی احسان اللہ شائق صاحب دامت برکاتہم (فیض یافتہ : فقیہ العصر حضرت مولانا مفتی رشید احمد لدھیانوی رحمۃ اللہ علیہ)، (استاذ جامعۃ الرشید کراچی، متعدد گرانقدر علمی وفقہی کتابوں کے مصنف)استاذ محترم اپنی تمام مصروفیات کے باوجود ”معہد“تشریف لاتے ہیں اور فتاویٰ دیکھتے ہیں۔
استاذِ محترم حضرت مولانا مفتی مسیح اللہ صاحب دامت برکاتہم، (حضرت مولانا مفتی محمد تقی عثمانی صاحب دامت برکاتہم اور حضرت
مولانا مفتی محمد رفیع عثمانی دامت برکاتہم سے براہ راست فیض یافتہ، طویل مدت تک دار العلوم کراچی میں فتوٰ نویسی کرتے رہے ہیں،
استاذ جامعہ دار العلوم کراچی، آپ کے شاگردوں کی تعداد بھی ہزاروں میں ہے)۔​​اورآخر میں استاذی المکرّم شیخ الحدیث حضرت مولانا نور البشر محمد نور الحق صاحب دامت فیوضہم فتاویٰ کو خود بنظرِ غائر دیکھتے ہیں۔
حضرت والا دامت برکاتہم جامعہ دار العلوم کراچی میں استاذ رہ چکے ہیں، جامعہ فاروقیہ کراچی میں تقریباً 20 سال درسِ حدیث دیتے
رہے، جامعہ فاروقیہ میں تخصص فی علوم الحدیث کے نگران بھی رہے، اور رئیسِ وفاق المدارس حضرت شیخ الحدیث مولانا مفتی سلیم اللہ خان
صاحب أدام الله فیوضہ نہایت معتمد ہیں، متعدد کتابوں میں استاذِ محترم کی تحقیق علماء کرام کے ہاں
معروف ہے۔ استاذ محترم کی ایک عظیم خدمت فتح الملہم (صحیح مسلم کی شرح) پر ہے جو انہوں نے حضرت مولانا مفتی محمد تقی عثمانی صاحب دامت برکاتہم کے زیرِ نگرانی انجام دی۔ یہ کتاب بیروت سے چھَپ چکی ہے۔ 
اس کے علاوہ استاذ محترم نےحضرت مولانا سلیم اللہ خان صاحب کے افادات بنام ”کشف الباری“میں علمی وتحقیقی کام کیا ہے جو اہلِ علم 
کے سامنے ہے اور علماءو طلبہ ان سے خوب استفادہ کررہے ہیں۔اللہ تعالیٰ ہمارے استاذِ محترم کے علم اور عمر میں برکت 
عطا فرمائےاور ہمیں حضرت کی قدر کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔​​اس پورے پروسس کے بعد فتویٰ یہاں پیسٹ کیا جاتا ہے۔ اس لیےہماری کوشش ہوتی ہے کہ ایک فتویٰ کا جواب کم از کم ہفتہ میں
مل جایا کرے، پندرہ دن یا اس سے زیادہ بھی لگ سکتے ہیں۔فتویٰ کی تحقیق کی جہاں ضرورت ہوگی، وہاں یہ مدت بڑھ بھی سکتی ہے۔
لیکن بہر حال ہماری کوشش ہوتی ہے کہ زیادہ تاخیر نہ ہو۔​​اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ اپنےخاص فضل وکرم سے خدمت دین کی توفیق عطا فرمائے۔

استاذِ محترم حضرت مولانا مفتی مسیح اللہ صاحب دامت برکاتہم، (حضرت مولانا مفتی محمد تقی عثمانی صاحب دامت برکاتہم اور حضرت مولانا مفتی محمد رفیع عثمانی دامت برکاتہم سے براہ راست فیض یافتہ، طویل مدت تک دار العلوم کراچی میں فتوٰ نویسی کرتے رہے ہیں، استاذ جامعہ دار العلوم کراچی، آپ کے شاگردوں کی تعداد بھی ہزاروں میں ہے)۔​​

اورآخر میں استاذی المکرّم شیخ الحدیث حضرت مولانا نور البشر محمد نور الحق صاحب دامت فیوضہم فتاویٰ کو خود بنظرِ غائر دیکھتے ہیں۔ حضرت والا دامت برکاتہم جامعہ دار العلوم کراچی میں استاذ رہ چکے ہیں، جامعہ فاروقیہ کراچی میں تقریباً 20 سال درسِ حدیث دیتے رہے، جامعہ فاروقیہ میں تخصص فی علوم الحدیث کے نگران بھی رہے، اور رئیسِ وفاق المدارس حضرت شیخ الحدیث مولانا مفتی سلیم اللہ خان صاحب أدام الله فیوضہ نہایت معتمد ہیں، متعدد کتابوں میں استاذِ محترم کی تحقیق علماء کرام کے ہاں معروف ہے۔ استاذ محترم کی ایک عظیم خدمت فتح الملہم (صحیح مسلم کی شرح) پر ہے جو انہوں نے حضرت مولانا مفتی محمد تقی عثمانی صاحب دامت برکاتہم کے زیرِ نگرانی انجام دی۔ یہ کتاب بیروت سے چھَپ چکی ہے۔ اس کے علاوہ استاذ محترم نےحضرت مولانا سلیم اللہ خان صاحب کے افادات بنام ”کشف الباری“میں علمی وتحقیقی کام کیا ہے جو اہلِ علم کے سامنے ہے اور علماءو طلبہ ان سے خوب استفادہ کررہے ہیں۔اللہ تعالیٰ ہمارے استاذِ محترم کے علم اور عمر میں برکت عطا فرمائےاور ہمیں حضرت کی قدر کرنے کی توفیق عطا فرمائے۔​

اس پورے پروسس کے بعد فتویٰ یہاں پیسٹ کیا جاتا ہے۔ اس لیےہماری کوشش ہوتی ہے کہ ایک فتویٰ کا جواب کم از کم ہفتہ میں مل جایا کرے، پندرہ دن یا اس سے زیادہ بھی لگ سکتے ہیں۔فتویٰ کی تحقیق کی جہاں ضرورت ہوگی، وہاں یہ مدت بڑھ بھی سکتی ہے۔ لیکن بہر حال ہماری کوشش ہوتی ہے کہ زیادہ تاخیر نہ ہو۔​​اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ اپنےخاص فضل وکرم سے خدمت دین کی توفیق عطا فرمائے۔